sad poetry in urdu

Poetry

Poetry is a form of literature which uses phonaesthetics for expression. Poetry has a very long history. It started when people started writing. Urdu language is very rich in poetry. The tradition of Mushaira started due to the people’s love for poetry. Movies also played an important part in popularity of poetry. Songs are an integral part of Urdu and Hindi movies. Songs are a form of poetry as well. Ghazal and qawwali are very famous among people of the sub continent. Although songs may become popular due to music as well. Ghazals and Qawwalis become popular solely due to beautiful poetry. Sad poetry in Urdu is the most popular genre. We will focus on this topic in this article.

sad poetry in urdu

Sad Poetry in Urdu

Poetry goes with the mood as well. If you feel sad, sad poetry touches the strings of your heart. Sad poetry in Urdu is a famous genre. We have listed some beautiful collection of sad poetry in Urdu. Sad poetry in Urdu is incomplete with out including Noshi Gillani’s poetry:

زمانے والوں سے چھپ کے رونے کے دن نہیں ہیں
اسے یہ   کہنا   اداس   ہو نے   کے   دن   نہیں  ہیں

میں جان  سکتی ہوں وصل میں اصل بھید کیا ہے

مگر  حقیقت   شناس   ہونے   کے  دن  نہیں  ہیں

If you are feeling lonely, this one is for you by Ahmad Faraz:

تیرے ہوتے ہوئے آجاتے تھی ساری دنیا
آج  تنہا  ہوں  تو  کوئ   آنے   والا  نہیں

If you are missing some one, this is for you:

اب کے ہم بچھڑے تو شاید کبھی خوابوں میں ملیں
جس  طرح  سوکھے  ہوئے پھول کتابوں میں ملیں

A very beautiful couplet by Munir Niazi:

کسی کو اپنے عمل کا حساب کیا دیتے
سوال سارے غلط تھے جواب کیا دیتے

John Elia said:

اک  تری  برابری   کے  لئے
خود کو کتنا گرا چکا ہوں میں

Another beautiful couplet by John Elia:

جو  دیکھتا  ہوں  وہی بولنے کا عادی ہوں
میں اپنے شہر کا سب سے بڑا فسادی ہوں

Sometimes your words don’t match your face, as said by Faiz Ahmad Faiz:

آواز میں ٹھراؤ تھا آنکھوں میں نمی تھی
اور کہہ رہا تھا میں نے سب کچھ بھلا دیا

And who hasn’t heard this one by Faiz:

اور بھی دکھ ہیں  زمانے میں محبت کے سوا
راحتیں اور بھی ہیں وصل کی راحت کے سوا

Sometimes someone’s thought keeps you busy all the time as said by Farhat Abbas Shah:

کبھی سحر تو کبھی شام لے گیا مجھ سے
تمہارا  درد  کئ  کام  لے  گیا  مجھ   سے

Habib Jalib’s poetry is a beautiful addition to sad poetry in Urdu:

اس  کے  بغیر  آج  بہت  جی  اداس  ہے
جالب چلو کہیں سے اسے ڈھونڈ لائیں ہم

Sometimes you are just fed up of your situation. Sometimes you just want to leave as Ibn-e-Insha said:

انشاجی  اٹھو  اب  کوچ  کرو اس  شہر  میں  جی کو لگانا کیا
وحشی کو سکوں سے کیا مطلب جوگی کا نگر میں ٹھکانا کیا

Sometimes in your life, you look back and think that you were solving the problem the wrong way. As said by Ghalib:

عمر  بھر  ہم  یوں  ہی  غلطی   کرتے  رہے غالب
دھول چہرے پہ تھی اور ہم آئینہ صاف کرتے رہے

Respect keeps you silent sometimes as Munir Niazi said:

ادب  کی  بات   ہے   ورنہ   منیر  سوچو  تو
جو شخص سنتا ہے وہ بول بھی توسکتا ہے

You run after someone eagerly, but when you get that person, You think that’s not worth it. As said by Mohsin Naqvi:

اب اس  کھو  رہا  ہوں  بڑے  اشتیاق  سے
وہ جس کو ڈھونڈنے میں زمانہ لگا مجھے

Amjad Islam Amjad’s beautiful lines:

حیرت سے سارے لفظ اسے دیکھتے رہے
باتوں  میں  اپنی  بات  کو  کیسا   بدل   گیا

Sometimes you feel that your negative points get more attention of people that your positive ones:

میری خوبی  پہ  رہتے  ہیں  یہاں اہل زبان خاموش
میرے عیبوں کا چرچا ہو تو گونگے بول پڑتے ہیں

You see someone who bears a lot but doesn’t say a word. As a poet says:

پھر یوں ہوا کہ صبر کی انگلی پکڑ کر ہم
اتنا  چلے  کہ  راستے   حیران   رہ   گئے

Some people lose good people in search of better as said by a poet:

مجھ سے بہتر کی تمنا اسے لے ڈوبے گی
کیا  برا  ہے  جو وہ مجھ پر قناعت کر لے

Another beautiful couplet by a poet:

وہ جو کہتا تھا کچھ نہیں ہوتا
اب وہ روتا ہے چپ نہیں ہوتا

When people forget old relationships, one is forced to think:

کبھی ہم میں تم میں بھی چاہ تھی کبھی ہم میں تم میں بھی راہ تھی
کبھی  ہم  بھی  تم  بھی  تھے  آشنا  تمہیں  یاد  ہو  کہ  نہ   یاد   ہو

People only keep relationship for their interests as said by a poet:

چھوٹے چھوٹے کئی بے فیض مفادات کے ساتھ
لوگ  زندہ  ہیں  عجب  صورت  حالات کے ساتھ

Sometimes your dreams are shattered and you pray like Parveen shakir:

جس  طرح  خواب  مرے  ہو گئے  ریزہ  ریزہ
اس طرح سے نہ کبھی کوئ ٹوٹ کے بکھرے

Eid is an occasion of happiness but not for those who are abroad:

اس  عید  پر  پھر ساتھ ہیں میرے
پردیس تنہائ اور بس تیری یادیں

Selfish people only think about themselves as said by Shakeeb Jalali:

ایک    اپنا    دیا    جلانے    کو
تم نے لاکھوں دیے بجھائے ہیں

Sometimes you make sacrifices for people and they forsake you as said by Habib Jalib:

جن کی خاطر شہر بھی چھوڑا جن کی خاطر بدنام ہوئے
آج  وہی  ہم  سے  بیگانے  بیگانے   سے   رہتے  ہیں

And we shall conclude this article with this beautiful sad poetry in urdu by Faiz Ahmad Faiz:

ہم  ایسے سادہ  دلوں  کی  نیاز مندی سے
بتوں نے کی ہیں جہاں میں خدائیاں کیا کیا

VN:F [1.9.22_1171]
Rating: 0.0/10 (0 votes cast)
VN:F [1.9.22_1171]
Rating: 0 (from 0 votes)

Add a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *